Muhabbat ho gaye mujhko

میری ساتھی حقیقت ھے
کے جب سے تم کو دیکھا ھے
نیا احساس پایا ھے
سنا ھے لوگ کھتے ھیں
مھبت نام ھے اسکا
وھی سب ھی تو ھوتا ھے
جو لوگوں سے سنا میں نے
ھر اک منظر سھانا سا
لگے جگ بھی دیوانہ سا
پیار کے گیت سنتا ھوں
میں خود بھی گنگناتا ھوں

تصور میں تجھے لا کر
ًمیں تنھا مسکراتا ھوں
نئے کپڑے پھن کر اب
میں خوشبو بھی لگاتا ھوں
میں اب لوگوں سے ملتا ھوں
بھت خوس حال لگتا ھوں
دھنک کے رنگ چنتا ھوں
تیراھی چھرہ بنتا ھوں
کھیں پر پیڑ دیکھوں تو
میں تیرا نام لکھتا ھوں
اسے پھر چوم لیتا ھوں

سبھی دلکش حسیں چہرے
تیرا ہی دھوکا دیتے ھیں
کوئی بھی دے صدا مجھکو
لگے تو نیں پکارا ھے
دیوانہ ہو گیا ھوں میں
تجھی میں کھو گیا ھوں میں
ھاں تیرا ھوگیا ھوں میں
میرے ساتھی حقیقت ھے
سہی یہ لوگ کہتے ھیں
مھبت ھو گئی مجھکو

~ از abbascom پر مارچ 22, 2012.

2 Responses to “Muhabbat ho gaye mujhko”

  1. Very nice poem

  2. wafa ruswa nahe kerna suno aisa nahe kerna mai pehlay he akaila hu mujay tanha nahe kerna meri in jheel ankho ko kabi sehra nahe kerna judai b jo a jaye to dil chota nahe kerna bohat masroof ho jana mujay socha nahe kerna bhrosa b zaruri hay magar sub ka nahe kerna mukadar phir mukadar hay koi dawa nahe kerna meri takmeel tumsay hay mujay adha nahe kerna jo likha hay wo he hoga koi shidwa nahe kerna wafa ruswa nahe kerna suno aisa nahe kerna.0313-6610216.

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

 
%d bloggers like this: