Dukh Fasana Nahi Ke Tujh Se kahien

دکھ فسانہ نہیں کے تجھ سے کہیں
دل بھی مانا نہیں کے تجھ سے کہیں
آج  تک   اپنی  بے   کلی   کا   سبب
خود بھی جانا نہیں کے تجھ سے کہیں
ایک   تو   خرف   آشنا   تھا   مگر
اب زمانہ نہیں کے تجھ سے کہیں
اے خدا درددل ہے بخشش دوست
آب و دانہ نہیں کے تجھ سے کہیں

~ از abbascom پر مئی 30, 2009.

One Response to “Dukh Fasana Nahi Ke Tujh Se kahien”

  1. Good one

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

 
%d bloggers like this: