کاش اے کاش

کاش اے کاش
میری خاموش محبت میں جاناں
کچھ اتنی تو گہرائی ہوتی
تو سمجھ لیتی
میرے دل کی صداؤں کو جاناں
تو بھرے شہر میں
یوں آج نہ رسوائی ہوتی
میں تو بس اتنا سمجھتا ہوں
اے میری ہمدم
تو جو ملتی تو نہ یوں دنیا پرائی ہوتی

~ از abbascom پر مارچ 14, 2009.

3 Responses to “کاش اے کاش”

  1. Nice One

  2. Great

  3. wao dats really nyc

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

 
%d bloggers like this: