GHAZAL BY SAGHAR SIDDIQUI

•مارچ 1, 2015 • Leave a Comment

چلو اک بار پھر سے اجنبی بن جائیں ہم دونوں

•فروری 28, 2015 • Leave a Comment

چلو اک بار پھر سے اجنبی بن جائیں ہم دونوں
نہ میں تم سے کوئی امید رکھوں دل نوازی کی
نہ تم میری طرف دیکھو غلط انداز نظروں سے
تمہیں بھی کوئی الجھن روکتی ھے پیش قدمی سے
مجھے بھی لوگ کہتے ہیں کے یہ جلوئے پرائے ہیں
میرے ہمراہ اب ہیں رسوائیاں میرے ماضی کی
تمہارے ساتھ بھی گزری ہوئی یادوں کے سائے ہیں
تعارف روگ بن جائے تو اس کو بھولنا بہتر
تعلق بوجھ بن جائے تو اس کو توڑنا اچھا
وہ افسانہ جسے انجام تک لانا نہ ہو ممکن
اسے اک خوبصورت موڑ دے کر چھوڑنا اچھا
چلو اک بار پھر سے اجنبی بن جائیں ہم دونوں

Dil main Thkana

•اکتوبر 6, 2012 • Leave a Comment

درد کا دل میں ٹھکا نہ ہو گیا
زندگی بھر کا تماشا ہو گیا

مبتلائے ھم بھی ہو گئے
ان کا ہنس دینا بہانا ہو گیا

بے خبر گلشن تھا میرے عشق سے
غنچے چٹکے راز افشا ہو گیا

ماہ و انجم پر نظر پڑنے لگی
ان کو دیکھے اک زمانہ ہو گیا

تھے نیاز و ناز کیا کیا خواب میں
کھل گئیں آنکھیں تو پردہ ھو گیا

تیرے جلوؤں کا عالم کیا کہوں
اک عالم اور پیدا ہو گیا

اپنی رسوائی سے ھے بڑھ کر یہ غم
ساتھ میرے تو بھی رسوا ہو گیا

درد دل میں کروٹیں لینے لگا
کس کی آنکھ کا اشارا ہو گیا

ذکر مے آیا گلشن جو گلشن میں جلیل
پھول سا غر سرو مینا ہو گیا

Ghazal-Sad Poetry

•ستمبر 9, 2012 • Leave a Comment

Ghazal-Sad Poetry

Ik tere rooth janne say

•اگست 28, 2012 • Leave a Comment

تیرے روٹھ جانے سے
کوئی فرق نہیں پڑے گا
پھول بھی کھلیں گے
تارے بھی چمکیں گے
مینا بھی برسے گی
ھاں مگر کسی کو
مسکرانہ بھول جائے گا
“اک تیرے روٹھ جانے سے”

yadoon ka jhoonka

•اگست 13, 2012 • 2 تبصرے

یادوں کا اک جھونکا آیا ھم سے ملنے برسوں بعد
پہلے اتنا رٰوئے نہیں تھے جتنا روٰئے برسوں بعد

لمحہ لمحہ گھر اجڑا ھے، مشکل سے احساس ہوا
پتھر آئے برسوں پہلے ، شیشے ٹوٹے برسوں بعد

آج ہماری خاک پہ دنیا رونے دھونے بیٹھی ھے
پھول ہوئے ہیں اتنے سستے جانے کتنے برسوں بعد

بھول بھی جاؤ کس نے توڑا، کیسے توڑا کیونکر توڑا
ڈھونڈ رھے ھو گلیوں میں کیا ، دل کے ٹکڑے برسوں بعد

دستک کی امید لگا کر کب تک یوں ہی آس میں جیتے
کل کا وعدہ کرنے والا ، ملنے آیا برسوں بعد

Log Mosam Ki tarah Kaisay Badal Jaty Hain-Urdu Gazhal

•جولائی 29, 2012 • Leave a Comment

Log Mosam Ki tarah Kaisay Badal Jaty Hain-Urdu Gazhal